ہم سے رابطہ کیجیئے    پہلا صفحہ   سائیٹ کا نقشہ   فارسي   انگليسي   العربيه  


ایران اور افغانستان کے علماء کی کثیر تعداد کی موجودگی میں ؛


بغیر کسی سرحد سے مختص کمانڈرز کی پہلی بین الاقوامی کانفرنس برگزار ہوئی

علماء اور ملکی مسئولین کی موجودگی میں بغیر کسی سرحد سے مختص کمانڈرز کی پہلی کانفرنس برگزار کی گئی۔
سید محمد جواد ھاشمی نژاد نے بغیر کسی سرحد سے مختص کمانڈرز کی پہلی کانفرنس (روایت عشق) کے بارے میں اپنے بیانات کا اظہار کرتے ہوئے کہا: جمہوری اسلامی ایران کا انقلاب عالم اسلام میں بہت ساری تبدیلیوں کا سبب بنا بالخصوص مڈل ایسٹ میں کے خطے میں ؛اس لحاظ سے بہت سارے ممالک اس انقلاب کی پیروی کرتے ہوئے تلاش کر رہے ہیں تاکہ اپنے ان نیک اھداف تک پہنچ سکیں۔
انہوں نے مزید بتاتے ہوئے کہا: افغانستان کا ملک انقلاب اسلامی کی کامیابی کے ابتدائی دنوں اور اسی طرح ایران کے جنگ کے دنوں میں سوویت کے قابضین کے قبضہ میں آگیا اس دن سے آج تک  ہم اس بات کے گواہ ہیں کہ دنوں ممالک کے سرحدی محافظوں اور عظیم کمانڈروں نے افغانستان اور ایران کے محاذوں پر ایک دوسرے کی مدد کی۔
انہوں نے اپنی گفتگو کو جاری رکھتے ہوئے کہا: ایران اور افغانستان کے محاذوں پر کمانڈروں نے مل کرباطل کے خلاف حق کی جنگ میں بعثیون سے جہاد کیا اور شہادت کے مرتبہ پر فائز ہوئے۔
آستان قدس رضوی کے غیر ایرانی زائرین کے سربراہ نے کہا: انٹرنیشنل ’’   بغیر کسی سرحد سے مختص کمانڈرزکی پہلی‘‘ کانفرنس ایران اور افغانستان کے عظیم کمانڈروں کوخراج تحسین پیش کرنے کے لئے ہے تاکہ اس سے دونوں قوموں کی بہادری، بزرگی اور اچھائیوں کو اسلامی اھداف کو پر چلنے کے لئے دکھایا جا سکے اور اسی طرح ان دو ممالک کی دو گذشتون نسلوں کی بہادری کو دکھایا جا سکے۔
انہوں ایران اور افغانستان کے درمیان مستکبریں کی تفرقہ ڈالنے کی شیطانی سازش کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا: دونوں قومیں ثقافتی لحاظ سے آپس میں بہت زیادہ نزدیک ہیں اور یہی ثقافت دونوں اسلامی ممالک کے درمیان اسلامی اتحاد کا باعث بنے گی۔
سید محمد جواد ھاشمی نژاد نے کہا: افغانستان سے تعلق رکھنے والے افراد کی کثیر تعداد میں اس کانفرنس کے اندر حاضر ہونا سبب بنا ہے تاکہ یہ نزدیکی اور قرابت واضح ہو سکے اور نئی نسل کے لئے شناخت کا زمینہ فراھم ہو سکے۔
نیوز کوڈ:39685
ماخذ:آستان نیوز
تاریخ:23/04/2017