ہم سے رابطہ کیجیئے    پہلا صفحہ   سائیٹ کا نقشہ   فارسي   انگليسي   العربيه  

ایران اور اسلام کے ثقافتی مشاہیر



ابوعلى مِسكوِيِہ

احمد بن محمد رازى چوتھی اور پانچویں صدی ہجری قمری کے نامور ایرانی ادیب، تاریخداں، فلسفی اور طبیب تھے- نظریاتی اور عملی حکمت کے اکثر شعبوں میں خاص طور پر اخلاق کی تہذیب پر زیادہ کام کیا جہاں تک کہ ان کو "معلم سوم" لقب دیے تھے- ان کی بعض تصانیف یہ ہیں: الفوز الاصغر؛ الفوز الاكبر؛ ترتيب السعادات و منازل العلوم؛ تہذيب الاخلاق؛ فوز السعادہ-

محمود سياوشانى

محمود بن خواجہ اسحاق شہابى سياوشانى ہروى، "شہابى" اور "عين‌الزمان" سے مشہور اور شاہ طہماسب صفوى کے زمانے میں خطاط تھے- ان کے بارے میں یہ ذکر کیا گیاہے کہ اس زمانے میں خواجہ محمود کے بغیر کسی دوسرے شخص نے خط نستعلیق سے واقفیت حاصل نہیں کی تھی- دیوان ہلالی کے ایک نسخے کی خطاطی ان کی فنکاری کا ایک اچھا نمونہ ہے-

منصور جہانگيرشاہی

منصور نادرالعصر ہندوستان کے ایرانی الاصل مصور، اور دسویں اور گیارہویں صدی ہجری قمری میں گورکانی کے دبستان مصوری کے ایک نمایان استاد تھے- جہانگیر کی دربار میں ان کو زیادہ احترام کرتے تھے- وہ مغول کے دبستان مصوری اور دوسرے ہندی اسالیب میں مینی اپچر کے ماہر تھے اور بادشاہی نسخوں کی مصوری میں زیادہ دستگاہ رکھتے تھے-