ہم سے رابطہ کیجیئے    پہلا صفحہ   سائیٹ کا نقشہ   فارسي   انگليسي   العربيه  


عطا ملک جوينى

علاء الدين عطا ملک‌ بن بہاءالدين محمد جوينى، ساتویں صدی ہجری قمری کے نامور ایرانی سیاسی شخصیت اور تاریخداں تھے- عطا ملک، منگولیا کے دارالحکومت قراقرم سے سفروں میں امیر ارغون کے ساتھ چلے گئے تھے- وہ نثر مرسل لکھنے کے ایک زبردست ماہر تھے جنہوں نے سادہ نویسی سے کام لیتے ہوئے موزوں اور مسجع عبارتوں سے اپنی تحریر کو سجایاہے- " تاريخ جہانگشای جوینی " ان کی تصنیف ہے-

حكيم صدرا

حكيم صدرالديـن مسيح الزمان شيرازى، جن کا لقب " حكيم صدرا " اور تخلص " مسيح الہ " تھا، گیارہویں صدی ہجری قمری میں ایران و ہند کے ایرانی طبیب تھے- وہ ابتدائی علوم کو سیکھنے کے بعد اصفہان چلے گئے اور وہاں شیخ بہائی سے کسب فیض کرتے ہوئے علوم عقلی اور علوم نقلی سیکھنے میں مصروف ہوگئے- علم الہیات میں بھی ان کا ایک اعلی مقام بھی حاصل تھا- یہ تصانیف ان کی ہیں: رسالہ قول الحق؛ حفظ الصحہ-

محمود چَغمِينى

محمود بن محمد، چھٹی اور ساتویں سدی ہجری قمری سے متعلق اور "چَغمينى خوارزمی" سے مشہور مصنف تھے فلکیات اور علم ریاضی کے ماہر ہوتے ہوئے، طب کی کتابوں کے مصنف بھی تھے- ان کے بعد میں آئے ہوئے سائنسدانوں نے ان کے آثار کو اپنا چراغ راہ قرار دیتے ہوئے ان کی کتابوں کے مختلف شرح لکھنے اور ان پر تبصرہ کرنے کا انتظام کیاہے- ان کی بعض تصانیف یہ ہیں: رسالہ فى قوى الكواكب و ضعفہا؛ الملخص فى الہيئہ؛ كتاب اوقليدس کی تلخیص-